رواں سال سیزن کی چار اہم فصلوں کے ساتھ تین معمولی فصلوں کی پیداوار میں بھی ریکارڈ اضافہ دیکھا گیا۔

اسلام آباد: پاکستان کی معیشت کو ترقی ملے گی کیونکہ رواں سیزن میں چار اہم فصلوں کے ساتھ ساتھ تین معمولی فصلوں کی ریکارڈ پیداوار ہوئی ہے ، جس سے 2021-22 میں کھانے پینے کی درآمد پر کم انحصار ظاہر ہوتا ہے۔

 

 

Advertisement

کپاس کی کم فصل کی پیداوار بنیادی طور پر بوائی کے علاقے میں کمی اور موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ ہے جو کھڑی فصل کو بری طرح متاثر کرتی ہے۔

 

 

قومی اکاؤنٹس کمیٹی (این اے سی) نے 2020-21 تک مجموعی گھریلو مصنوعات کا جائزہ لینے کے لئے صوبائی فصل کے تخمینے کی بنیاد پر یہ تخمینے لگائے ہیں۔ اعداد و شمار پر نظرثانی گذشتہ تخمینے سے کی گئی ہے جو پچھلے سال کے دوران مثبت شرح نمو ہے۔

 

 

کپاس کی پیداوار اسی سال کے دوران 9.148 ملین گانٹھوں کے مقابلہ میں 22.78 فیصد کم ہوکر 7.064 ملین گانٹھوں پر آگئی۔ اعدادوشمار کے مطابق ، کپاس کی کاشت گذشتہ سال 2.517m ہیکٹر کے مقابلے میں 2.079 ملین ہیکٹر پر ہوئی تھی ، جس میں 17.42pc کی کمی ظاہر ہوئی ہے۔

 

 

متعدد سالوں سے ، روئی کو پاکستان کی معیشت کی لائف لائن سمجھا جاتا تھا لیکن اب فصل کو بین الاقوامی قیمتوں سے سخت مسابقت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *