سندھ کے علاقے جیکب آباد میں پانی کی قلت کے باعث احتجاج کرنے والے شہری کو سانپ نے کاٹ لیا۔

جیکب آباد: سندھ کے ضلع جیکب آباد میں پانی کی شدید قلت کے خلاف جمعرات کو ایک احتجاجی ریلی نکالی گئی۔

 

وزیر اعلیٰ سندھ کے مشیر برائے جیل خانہ اعجاز حسین جکھرانی نے اس ریلی کی قیادت کی ، جس میں خواتین اور مردوں سمیت لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ ایم پی اے ڈاکٹر سہراب سرکی نے بھی احتجاجی ریلی میں حصہ لیا۔

Advertisement

 

 

جکھرانی نے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے دعوی کیا کہ مرکز نے سندھ کو دریا کے پانی میں اپنے حصہ سے محروم کردیا ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ وفاقی حکومت پانی کا بہاو روک کر صوبے کو صحرا میں تبدیل کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

 

 

احتجاج کرنے والے مقام پر ایک ناخوشگوار واقعہ اس وقت پیش آیا جب پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے کارکن کو سانپ نے کاٹا تھا۔

 

 

پولیس نے بتایا کہ رحمت اللہ کھوسو کے ہاتھوں میں سانپ تھا جب وہ پانی کی قلت کے خلاف نعرے لگا رہا تھا جب اسے کاٹ لیا گیا۔ طبی امداد کے لیے اسے قریبی اسپتال لے جایا گیا۔

 

 

پاکستان پیپلز پارٹی کے خلاف مظاہروں نے شدت اختیار کر لی۔ عام عوام اور کاشتکار اپنے جائز حقوق کے حصول کے لیے سڑکوں پر نکل آئے۔ اسی احتجاج کے دوران یہ ناخوشگوار واقعہ پیش آیا۔

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *