دنیا کی بلند ترین چوٹی سر کرنے والے پاکستانی کوہ پیماؤں کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔

سوات: دنیا کی بلند ترین چوٹی ماؤنٹ ایورسٹ کو سر کرنے والے پاکستانی کوہ پیماؤں کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔

 

اس سال دو پاکستانی کوہ پیما، سرباز خان اور شہروز کاشف ماؤنٹ ایورسٹ کی چوٹی پر پہنچے۔ اور ملک کا نام روشن کرنے والوں کی فہرست میں شامل ہو گئے۔

Advertisement

 

کاشف 19 سال کی عمر میں ایورسٹ کو سر کرنے والے سب سے کم عمر پاکستانی کوہ پیما بن گئے جبکہ سرباز خان نے نیپال میں ایورسٹ اور اناپورنا کی چوٹیوں کو سر کیا۔ ایک اور پاکستانی کوہ پیما عبدال جوشی نے بھی انا پورنا چوٹی کو اسکیل کیا۔

 

 

ایس پی ایس ٹریکنگ کلب کے ذریعہ ’اسٹینڈ اپ فار چیمپین 21‘ کے عنوان سے منعقدہ پروگرام کا انعقاد کیا گیا۔ اس پروگرام میں ملک بھر سے پیشہ ور کوہ پیماؤں نے حصہ لیا۔

 

 

کے پی سیکریٹری اطلاعات ارشاد خان اور ایس پی ایس کے ڈائریکٹر منور علی شاہ نے اس تقریب میں شرکت کی۔

مرحوم پاکستانی کوہ پیما محمد علی سدپارہ، آئس لینڈ کے کوہ پیما جان سنوری سیگورجنسو اور چلی جوان پابلو موہر سے تعلق رکھنے والے کوہ پیما کو بھی خراج تحسین پیش کیا گیا جو 5 فروری 2021 کو موسم سرما میں کے 2 سر کرتے ہوئے لاپتہ ہوگئے تھے۔ تینوں کوہ پیماؤں کے لئے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی۔

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *