ترجمان ریلوے کے مطابق ٹرین ڈرائیور نے ایمرجنسی بریک لگائے اور سر سید ایکسپریس کو ملت ایکسپریس سے بچانے کی کوشش کی۔

لاہور: ملت ایکسپریس ڈہرکی ریلوے اسٹیشن سے روانہ ہوئی اور سکھر سے ٹرین کے پٹڑی سے اترنے کی اطلاع پاکستان ریلوے کے ترجمان نے دی۔

ریلوے کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ پٹری سے اترنے کے دوران ملت ایکسپریس کی بوگیاں اپ ٹریک سے ڈاؤن ٹریک کی طرف بڑھیں۔

 

Advertisement

ترجمان کے مطابق ، “صبح سر سید ایکسپریس ریٹی کے علاقے سے گزری۔” ترجمان ریلوے کا کہنا ہے کہ “ڈرائیور نے ایمرجنسی بریک لگائے اور سرسید ایکسپریس کو روکنے کی کوشش کی لیکن یہ ملت ایکسپریس کی پٹری سے اتر جانے والی بوگیوں سے ٹکرا گئی۔”

 

 

ترجمان ریلوے نے مزید بتایا ، “یہ امدادی ٹرین صبح 6:45 بجے ڈہرکی پہنچی۔

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ سندھ کے ضلع گھوٹکی کے علاقے ریتی اور ڈہرکی ریلوے اسٹیشنوں کے مابین سرسید ایکسپریس ٹرین ملت ایکسپریس سے ٹکرا جانے سے کم از کم 50 افراد اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے اور 70 دیگر زخمی ہوگئے۔

 

 

ذرائع کے مطابق ، ریلوے کے عہدیداروں کے مطابق یہ حادثہ اس وقت پیش آیا جب سرگودھا جانے والی سرسید ایکسپریس ملت ایکسپریس سے ٹکرا گئی جو پٹری سے اترنے کے بعد پہلے ہی ٹریک پر موجود تھی۔

 

 

دونوں ٹرینوں کی 14 بوگیاں وقوعے کا شکار ہوگئیں جن میں سے چار مکمل طور پر مسمار ہوگئیں۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *