اعظم سواتی نے وزیراعظم عمران خان کو ٹرین سانحے کے اصل حقائق سے آگاہ کر دیا۔

رحیم یار خان: ٹرین سانحے کی مکمل انکوائری رپورٹ منظر عام پر لائی جائے گی اور اس کو عملی جامہ پہنایا جائے گا۔

 

اس کا اعلان بدھ کے روز پاکستان ریلوے ہیڈ کوارٹر لاہور میں کیا جائے گا۔

Advertisement

 

یہ بات وفاقی وزیر ریلوے اعظم خان سواتی نے شیخ زید میڈیکل کالج اسپتال (SZMCH) میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

 

انہوں نے دعوی کیا کہ سگنل سسٹم پر 20 ارب روپے خرچ ہوئے جو ابھی تک کام نہیں کر سکے تھے اور ٹرینیں انتہائی احتیاط کے ساتھ چلائی جارہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سکھر ڈویژن ریلوے ٹریک کو 1971 میں بچھایا گیا تھا جس کو 30 سالوں میں تبدیل کرنے کی ضرورت تھی لیکن افسوس کہ یہ کام نہیں ہوسکا۔

 

 

سواتی نے کہا کہ انہوں نے پوری صورتحال وزیر اعظم عمران خان اور وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کو پہنچادی ہے۔ وزیر نے کہا ، “کیا ہمیں انتظار کرنا چاہئے کہ سی پی ای سی کے تحت چین کی جانب سے ایم ایل کو سزا دی جائے یا اپنے طور پر ٹریک کی بحالی کا فیصلہ کیا جائے گا۔

 

 

انہوں نے کہا کہ قیمتی انسانی جانوں سے کھیلنے والے افسران کو سزا دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ واقعات ریلوے حکام کی غفلت کی وجہ سے رونما ہو رہے ہیں۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ سکھر ڈویژن کا ریلوے ٹریک خستہ حال تھا۔

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *