ڈاکٹروں نے قومی لائسنسنگ امتحان کو مسترد کرتے ہوئے حکومت سے تعلیم کے معیار کو بہتر بنانے کا مطالبہ کر دیا۔

پشاور: ڈاکٹروں نے قومی لائسنسنگ امتحان کو مسترد کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ وفاقی حکومت اہل طبی ماہرین کے لئے اضافی امتحانات لینے کے بجائے تعلیم کے معیار کو بہتر بنائے۔

 

 

Advertisement

پشاور پریس کلب میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے گرینڈ میڈوکس الائنس (جی ڈی اے) اور ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے صوبائی عہدیداروں نے کہا کہ اگر حکومت ان کے مطالبات کو ماننے میں ناکام رہی تو ڈاکٹر احتجاجی تحریک چلائیں گے۔

 

 

وائی ​​ڈی اے کے ڈاکٹر رضوان کنڈی اور جی ڈی اے کے ڈاکٹر محمد نایاب نے کہا کہ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز اور خیبر میڈیکل یونیورسٹی کی موجودگی میں لائسنس کا امتحان ملک کے تعلیمی اداروں کے معیار پر سوالیہ نشان ہے۔

 

 

انہوں نے کہا ، لائسنسنگ کا امتحان ڈاکٹروں کے لئے قابل قبول نہیں تھا کیونکہ اس سے ان کی ترقی میں رکاوٹیں پیدا ہوں گی۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میڈیکل کمیشن کی کابینہ کے انتخاب کے بجائے مناسب انتخابات کے ذریعے کیا جائے۔ انہوں نے مسائل کے حل کے لئے پاکستان میڈیکل کمیشن کے نائب صدر علی رضا سے جلد استعفی دینے کا مطالبہ کیا۔

 

 

ڈاکٹر رضوان نے کہا کہ وفاقی حکومت کو ڈاکٹروں کے تحفظات کا نوٹس لینا چاہئے اور قومی لائسنسنگ کا امتحان منسوخ کرنا چاہئے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ حکومت لوگوں کی جانیں بچانے کے لئے ان بحرانوں پر کریک ڈاؤن شروع کرے۔

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *